کسے آواز دیتے ہو؟

Pakistan Floods

کسے آواز دیتے ہو؟

کسے سر پے چڑھاتے ہو؟

یہ نعرے کیوں لگاتے ہو؟

یہ جلسے کیوں سجاتے ہو؟

 

یہ تو بے حس ہیں سارے

شیطانوں کے حواری ہیں

مذہب کی تجارت میں

خدا کو بچ دیتے ہیں 

 

یہ تو بدنام ہیں سارے

لالچ کے پجاری ہیں

دولت کی محبت میں

وطن کو بچ دیتے ہیں

 

یہ تو بے شرم ہیں سارے

عزت کے شکاری ہیں

ہوس کی آگ میں جلتے

غیرت کو بچ دیتے ہیں

 

وطن میں بھوک اگتی ہے

گھروں میں آگ لگتی ہے

خون کی ندیاں بہتی ہیں

زندگی نایاب ہوتی ہے

 

یہ چراغاں کرتے ہیں

محلوں کو سجاتے ہیں

ہمارا خون پی کے سب 

نشے میں رقص کرتے ہیں

 

یہ تو گرگ ہیں سارے

خنزیر وحشی ہیں

آدم خور ہیں ایسے

کے ہڈی بھی نا چھوڑیں گے 

 

ان سے امید رکھتے ہو؟

کیا امید رکھتے ہو؟

بچا لیں گے یہ تم کو؟

سر پے ہاتھ رکھیں گے؟

 

بوٹی ایک نا چھوڑیں گے

چچوڑیں گے نچوڑیں گے

لہو سب چوس کے سارا

کبھی مڑ  کر نا دیکھیں گے

   

کسے آواز دیتے ہو؟

کسے سر پے چڑھاتے ہو؟

یہ نعرے کیوں لگاتے ہو؟

یہ جلسے کیوں سجاتے ہو؟

 

قائد کون ہے ایسا

وطن کو جو بچاے گا؟

 مسیحا کون ہے ایسا

مدد کو کون آے گا؟

 

تم اپنی ذات میں ڈھونڈو

قائد بھی مسیحا بھی

میر کارواں وہ تھا

میر کارواں تم ہو

پاکستان بھی تم تھے

پاکستان بھی تم ہو

اپنی داستانوں کے

مصور اصل میں خود ہو

 

بس اب بھول جاؤ سب نعرے

بس اب چھوڑ دو یہ جلسے

چوکوں میں ٹانگ دو ان کو

کھالیں کھینچ دو ساری 

کوڑے میں پھینک دو ان کو

آنکھیں نوچ لو ساری

 

بس اتنا یاد رکھو تم

محنت میں، عبادت میں 

خدمت میں، اعانت میں 

مشقّت میں، دیانت میں

قناعت میں، عدالت میں

ترقی کا راز پنہاں ہے

نیا پاکستان پنہاں ہے

 

بس اتنا یاد رکھو تم

جب اس کے پاس جایئں گے

اعمال پرکھے جایئں گے

جواب سب کو دینا ہے

حساب سب کو دینا ہے  

       

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s