وعدہ

holding_hands_by_annakoutsidou_d5ssqyh-fullview

جب خوشیاں ہر سو مہکیں گی

اور روشن سارے پل ہوں گے

یا ہر تمنا پا کر تم

کھلکھلاتے ہنس دو گے

جب امید افق پر چمکے گی

اور کوئی اپنا بھی پاس ہو گا

یا تم قسمت کے دامن سے

خوشیاں ساری چن لو گے

میں اب بھی تمھارے ساتھ ہی ہوں

میں تب بھی تمھارے ساتھ ہوں گا

 

جب دھوپ میں تیزی خوب ہو گی

اور سایہ پاس نا پھٹکے گا

یا بارش چھم چھم خوب ہو گی

اور پانی لہریں مارے گا

جب بادل کڑ کڑ گرجیں گے

اور دل سینے میں دھڑکے گا

یا برف سی سردی خوب ہوگی

اور آگ کی گرمی دور ہوگی

میں اب بھی تمھارے ساتھ ہی ہوں

میں تب بھی تمھارے ساتھ ہوں گا

 

جب خوشیاں سرپٹ بھاگیں گی

اور آنکھ میں آنسو چمکے گا

یا تپتے سورج کے ہاتھوں میں

جبر کی ریکھا سلگے گی

جب سانسیں بکھری جایئں گی

اور روح کے دھاگے الجھیں گے

یا نیلے فلک کی چھت نیچے

کوئی پناہ امان نا پاؤ گے

میں اب بھی تمھارے ساتھ ہی ہوں

میں تب بھی تمھارے ساتھ ہوں گا

 

جب خلق خدا کے پہلو میں

سب دل پتھر کے دھڑکیں گے

یا رشتے سارے آنگن میں

آنکھ مچولی کھیلیں گے

جب ذات کا درد سب خلیوں میں

تڑپ تڑپ کر مچلے گا

یا جن پر بھروسہ کرتے ہو

وہ سب بھروسہ توڑیں گے

میں اب بھی تمھارے ساتھ ہی ہوں

میں تب بھی تمھارے ساتھ ہوں گا

 

جب سب سازوں کے تاروں پر

کوئی نغمہ دکھ کا گونجے گا

یا خوشی کے سارے روشن گیت

گہرے بادل میں گم ہوں گے

جب سانس تمھارے دھیمے سے

کچھ کہنے کو ترسیں گے

یا ہاتھ اٹھیں گے مانگن کو

پر اس کا دل نا پگھلے گا

میں اب بھی تمھارے ساتھ ہی ہوں

میں تب بھی تمھارے ساتھ ہوں گا

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s