اندھیرے کا سفر

A wonderful story

Arooj Zaka

images

کمرے میں آتے ہی جوتے دیوار کے ساتھ لگی کرسی کے نیچے اور موزے، ذرا فاصلے پر قالین پر پھینک دیئے۔ امی پانی کا گلاس لیکر آیہی تھیں کہ صاف ستھرے جھاڑو لگے قالین پر،مٹی میں اٹے جوتے دیکھ کر آگ بگولا ہو گئیں۔ انکی ڈانٹ میری لا پرواہ طبیعت سے شروع ہوئی اور میری مستقبل میں آنے والی بیوی سے گھر کے سارے کام کروانے پر، ختم ہوئی۔

“!امی”

میں نے امی کو کمرے سے غصے سے جاتے دیکھا تو آواز لگائی۔ انہوں نےتیوری چڑھاتے مڑ کے مجھے دیکھا اور بولیں

“کیا ہے؟”

“ایسے تیوریاں چڑھانے سے جھریاں جلدی آ جائیں گی، اور ابو کی نظریں یہاں وہاں بھٹکنے لگیں گی”

 میں نے بھی امی کا غصہ ٹھنڈا کرنے کو بات کا رخ بدلا اور خالی گلاس انکے ہاتھ میں تھما دیا۔ ایک شرمیلی مسکراہٹ انکے ہونٹوں پرنمودار ہوئی، میرے کاندھے پر ایک تھپڑ رسید کیا اور “چل ہٹ”…

View original post 4,318 more words

حلال روزی

Compact and full of impact!

Arooj Zaka

halal money

Source: 1stethical.com

وہ کسی ضروری کام کا بہانہ بنا کر اپنے مسیہی دوست کے غریب خانے سے بنا کھائے پیئے اٹھ آئے۔ ڈاکٹر صاحب حاجی تھے اور بھرپور اسلامی طرز کے اصول رکھتے تھے بھلا کیسے غیر مزہب گھرانے کا حرام کھانہ کھاتے۔ اپنے عالی شان ہسپتال کے جدید آپریشن تھیٹر میں بسم اللہ کے ساتھ داخل ہوتے ھی ڈاکٹر صاحب نے پلان کے مطابق اپنا اس ہفتے کا نواں آپریشن شروع کیا۔ چند گھنٹوں کی چیر پھاڑ کے بعد باہر نکلنے سے پہلے انھوں نے نرس سے تصدیق کر لی کہ مریض کے اہل خانہ کو اپینڈکس بتایا تھا یا گردے کا درد؟

View original post

برفی

A most wonderful story by all standards. I wish it was mine!

Imtiaz Ahmad

11083864_10204098593525374_4451744376119279318_n

برفی (افسانہ) 

یہ خوشی کی بات تھی یا پھر اس کی دنیا لٹ چکی تھی؟ لوگ اس کے ساتھ اظہار افسوس کر رہے تھے، ظاہری طور پر محمد شریف بھی ان کا ساتھ دے رہا تھا لیکن دل ہی دل میں وہ اللہ کے سامنے سجدہ ریز تھا۔ ناجانے کیوں وہ متاع زندگی لٹانے کے بعد خود کو دنیا کی فکروں سے آزاد محسوس کر رہا تھا۔ یہ راز اس پر آج کھلا تھا کہ فکریں ان چیزوں کے ساتھ جڑی ہوئی ہیں ، جن کو ہم اللہ کی نعمتیں سمجھتے ہیں، جن کی خاطر ہم تیز آندھی کی ساتھ اڑنے والے ہزاروں کاغذوں کی طرح بستیوں سے نکل کر بیا بانوں اور ویرانوں کی طرف سفر کرتے رہتے ہیں۔ یہ حقیقت شریف پر آج کھلی تھی کہ خواہشوں اور ضرورتوں کے ریتلے راستے اُسے اُس صحرا میں لے آئے تھے ، جس کی گلیاں قبر کے بنداور اندھرے…

View original post 2,842 more words