اظہار کرو، انتظار نا کرو

maxresdefault-1.jpg

دیکھئے صاحب! میں بالکل بھی پاگل نہیں ہوں. ہاں میرے الفاظ سننے میں پاگل پن ضرور لگتے ہیں مگر حقیقت میں ایسا نہیں ہے

دیکھئے آپ میری بات پر دھیان ضرور دیجئے. بیشک پاگل سمجھ کر پتھر مار دیں مگر ایک لمحے کو میری بات پر دھیان ضرور دیں

ایک بار میری کہانی سن لیں، یقین مانیں اس میں آپ کا ہی فائدہ ہے

Continue reading

لارنس گارڈن، سائبیریا اور عشق

thumb-1920-96294

عایشہ کے ساتھ کامران کی پہلی ملاقات ایک کانفرنس میں ہوئی. دیکھنے میں عام سی لڑکی تھی. کھلتا ہوا گندمی رنگ، سرو قد، متناسب جسم، کالی گہری آنکھیں، لمبی لمبی مخروطی انگلیاں، سر پر سکارف، ایک کلائی میں پتلی پتلی سونے کی دو چوڑیاں اور سادہ سا ہلکے سے رنگ کا شلوار قمیض. شرمیلی بہت تھی اور اتنے سارے مردوں میں اکیلی لڑکی ہونے کے باعث بالکل اپنے آپ میں سمٹی جا رہی تھی

 

Continue reading

سنہری دروازوں والی مسجد اور چیکو سلواکیہ کی اینا

door

دبئی ایئر پورٹ شاید دنیا کا وہ واحد ائیرپورٹ ہے جہاں ہر قومیت، ہر رنگ، ہر نسل اور ہر زبان بولتا شخص نظر آتا ہے. میں اس بہت بڑے ایئر پورٹ پر پچھلے ایک گھنٹے سے مارا مارا پھر رہا تھا
جی نہیں، مجھے کسی مخصوص فلائٹ کیلئے کسی خاص گیٹ کی تلاش نہیں تھی
مجھے کسی مخصوص ایئر لائن کے ٹکٹ کاؤنٹر یا ہیلپ ڈیسک کی بھی تلاش نہیں تھی
مجھے تلاش تھی ایک عدد سموکنگ لاؤنج کی کیونکہ تہذیب یافتہ ملکوں میں ہر جگہ سگریٹ پینے کی اجازت نہیں ہوتی. یقیناً بہت اچھی بات ہے لیکن میرے جیسے تمباکو کے عاشقوں کیلئے بہت ہی عذاب کا بائث ہے

Continue reading

کتوں والی سرکار اور سین زوخت

mg_8155-1024x683

تمھیں یاد ہے، کچھ عرصہ قبل، تم نے مجھ سے ایک سوال پوچھا تھا اور میں نے کوئی جواب نہیں دیا تھا؟’ بابا جی نے اچانک پوچھا

‘ہاں….!’ میں نے سوچتے ہوئے کہا. ‘آپ کسی عجیب سے لفظ کے بارے میں بتا رہے تھے’

.سین زوخت……..یعنی “خواہشوں کا تعاقب”.’ باباجی نے نرمی سے مسکراتے ہوئے کہا’

‘میں نے کہا تھا کے اس لفظ کا مطلب سمجھنے کا وقت نہیں آیا’

ہاں…..!’ میں نے اثبات میں سر ہلایا. مجھے بات چیت میں کوئی دلچسپی نہیں تھی لیکن بابا جی کا دل رکھنے کو میں نے کہ دیا

.وقت آ گیا ہے بیٹے.’ بابا جی اٹھ کر کھڑے ہوگئے اور میرے پاس آ کر میرے کندھے پر ہاتھ رکھ دیا’

 

Continue reading

ہم سب قاتل ہیں

20769939_1675018275844453_4533984488710906233_n

ابّا! اس دفعہ نا، چودہ اگست پر میں، سفید رنگ کی نئی شلوار قمیض پہنوں گا.’ آٹھ سالہ ثاقب نے اپنے باپ کی گود میں گھستے ہوئے کہا

 

.اور کیا لے گا میرا بیٹا؟’ اللہ بخش نے پیار سے اس کے بال بگاڑتے ہوئے پوچھا’

 

.اور؟ اور…………ڈھیر ساری جھنڈیاں. سبز اور سفید.’ ثاقب نے کچھ سوچتے ہوئے کہا’

 

سب کچھ لے کے دوں گا اپنے بیٹے کو. لیکن اپنا وعدہ یاد ہے نا؟’ الله بخش نے اپنے بیٹے کا ماتھا چومتے ہوئے کہا

Continue reading

کامران کی بارہ دری اور ریڈ انڈین حسینہ

d77c76cd4c58da8a898aabab435271fd

وہ دسمبر کی ایک کالی برفیلی رات تھی، جب میں نے کامران کی بارہ دری کے سامنے ایک ریڈ انڈین حسینہ کو، بھڑکتی آگ کے الاؤ کے گرد ناچتے دیکھا. ذرا سوچئے، ہر طرف چھایا رات کا گھپ، کہرے سے ٹھٹرتا اندھیرا؛ راوی کے گدلے پانی پر ناچتے دھند کے گہرے بادل، کامران کی بارہ دری کا پر آسیب ماحول اور ویرانے کا بوجھل سناٹا. ایسے میں چلتے چلتے اچانک آپ کی نظر، دور بھڑکتی آگ پر پڑتی ہے. کپکپاتے ہاتھ اور حرارت کی خواہش آپ کو، آگ کے قریب لئے جاتے ہیں. لیکن تھوڑا دور ہی سےآپ کو، آگ کے گرد ایک سایہ ناچتا دکھائی دیتا ہے. ساتھ ہی کسی اجنبی زبان اور لوچ سے بھرپور نسوانی لہجے میں، گانے کی آواز آتی ہے. آپ اور قریب جاتے ہیں تو سائے کے خد و خال نمایاں ہونے شروع ہوجاتے ہیں. آپ اپنی آنکھیں ملتے ہیں، بازوؤں پر چٹکیاں لیتے ہیں، لیکن وہ خواب نہیں حقیقت ہے. دریاۓ راوی کے کنارے واقعی ایک ریڈ انڈین حسینہ ناچ رہی ہے

___________________________________________

Continue reading

اداسی کے پیغمبر

e4101303c5d75c626be7804288674a1d

میرا نام کامران اسماعیل ہے. تقریباً پینتالیس سال عمر ہے. پیدا پاکستان میں ہوا لیکن بچپن اور جوانی ساری امریکا میں گزری. ہمیشہ سے ہی نفسیات میں دلچسپی رہی. لہٰذا سائیکالوجی میں ہی ماسٹرز اور ڈاکٹریٹ کیا. پھر مزید دل کیا تو سائکو انالیسس یعنی تحلیل نفسی میں مہارت حاصل کی اور لگے ہاتھوں ایک ماسٹر، کرمینالوجی میں بھی کر لیا. پہلے ٹیکساس کے ایک مشہور سائیکالوجسٹ ڈاکٹر گراہم کے ساتھ پریکٹس کرتا رہا. پھر اپنا کلینک کھول لیا. جب دو چار اچھے رسالوں میں میرے مقالے شائع ہوے تو امریکن جسٹس ڈیپارٹمنٹ نے مجھے اپنے ایک اسپیشل یونٹ کے ساتھ کام کرنے کی پیشکش کی جو میں نے فوراً قبول کر لی

Continue reading