بابا پائڈ پائپر اور نفرت کے چوہے

‘معزز کمیٹی ممبران، آج آپ سب کو یہاں اچانک بلانے کے پیچھے ایک بہت ہی اہم مقصد کارفرما ہے’

قاضی صاحب نے اپنی بھاری بھرکم آواز میں اور گھمبیر لہجے کے ساتھ گفتگو کا آغاز کیا  

تقسیم کے وقت سے لے کر آج تک، ہمارا محلہ صرف مومن مسلمانوں کا ہی مسکن رہا ہے

پوری گلی ‘بےشک! بےشک!’ اور ‘الحمدللّہ! الحمدللّہ!’ کی آوازوں سے گونج اٹھی

قاضی صاحب کچھ دیر اپنی داڑھی سہلاتے ہوئے حاضرین کی طرف ستائش بھری نظروں سے دیکھتے رہے اور پھر خاموشی چھا جانے پر بولنا شروع کیا

مجھے بےحد افسوس ہے کہ اب ایسا نہیں ہے. ہم مومنین کے درمیان ایک کافر اپنے خاندان سمیت آ بسا ہے

 

Continue Reading

The Ordeal

The hope in each dawn fades by the dusk;

it’s not sudden, rather it dies a slow death

Expectations lose luster and become brusk;

it’s an ordeal, waiting for the last breath   

Continue Reading

Hope and Doom

Everything in the universe is a teacher;

each phenomenon and each creature

Cycle of the sun, taking birth and dying;

from behind the doom, hope is sighing

#hope #doom #teacher #universe #english #photography #mobile #Pakistan #poetry

Continue Reading

آؤ ہم خود کو خود ہی ڈھونڈتے ہیں

آؤ ہم خود کو خود ہی ڈھونڈتے ہیں

وہ محبت جو کبھی کی تو بڑے شوق سے تھی

وہ محبت جو نامکمل تھی، نامکمل ہی تمام ہوئی

وہ چاہت کہ جس کا چراغ کبھی شام کی رونق تھی

وہ چاہت جو نا کبھی میری، نا کبھی تیری غلام ہوئی

وہ انا جو کبھی عشق کی دہلیز پر چکنا چور تھی

وہ بے خودی جو نا عشق تھی، نا کبھی عشق انجام ہوئی

وہ خون لفظ جو کبھی زنگ خوردہ زنجیر تھی

وہ نظم جو ادھوری تھی، ادھوری ہی زبان زد عام ہوئی

آؤ وہ پرانے خواب، اپنی صحرا آنکھوں سے

خود ہی کھنگالتے ہیں، خود ہی سوچتے ہیں

آؤ ہم خود کو خود ہی ڈھونڈتے ہیں

Continue Reading